تاریخ شائع کریں2022 6 October گھنٹہ 13:30
خبر کا کوڈ : 567944

امریکی انٹیلی جنس: ڈوگینا قتل کے پیچھے یوکرین کا ہاتھ ہے

نیویارک ٹائمز نے انکشاف کیا ہے کہ امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں کا خیال ہے کہ یوکرائنی حکومت کے کچھ حصوں نے اگست میں ماسکو کے قریب کار بم حملے کی اجازت دی تھی جس میں ایک ممتاز روسی قوم پرست کی بیٹی دریا ڈوگینا مارا گیا تھا۔
امریکی انٹیلی جنس: ڈوگینا قتل کے پیچھے یوکرین کا ہاتھ ہے
نیویارک ٹائمز نے انکشاف کیا ہے کہ امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں کا خیال ہے کہ یوکرائنی حکومت کے کچھ حصوں نے اگست میں ماسکو کے قریب کار بم حملے کی اجازت دی تھی جس میں ایک ممتاز روسی قوم پرست کی بیٹی دریا ڈوگینا مارا گیا تھا۔

بدھ کے روز اخبار نے رپورٹ کیا کہ یوکرین کی شراکت کا اندازہ امریکی حکومت کے اندر گزشتہ ہفتے شیئر کیا گیا تھا۔

انٹیلی جنس کے بارے میں بات کرنے والے امریکی حکام نے یہ نہیں بتایا کہ یوکرائنی حکومت کے کن عناصر کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ انہوں نے اس مشن کی اجازت دی، کس نے یہ حملہ کیا، یا صدر ولادیمیر زیلنسکی نے اس پر دستخط کیے تھے۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ یوکرین کی کارروائی اور امریکی ردعمل کے بارے میں بریفنگ دینے والوں نے خفیہ معلومات اور حساس سفارت کاری کے معاملات پر بات کرنے کے لیے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بات کی۔

ڈوگینا، ایک قوم پرست روسی ٹی وی چینل کے ساتھ ایک 29 سالہ مبصر، اگست میں اس کی گاڑی میں بم پھٹنے سے ہلاک ہو گئی تھی، اس حملے میں روس نے یوکرائن کی "خصوصی خدمات" پر الزام لگایا تھا۔

امریکی حکام نے اخبار کو یہ بھی بتایا کہ ان کے پاس یوکرین کی حکومت کے مسابقتی طاقت کے مراکز کی مکمل تصویر نہیں ہے، جس میں فوج، سکیورٹی سروسز اور زیلنسکی کے دفتر شامل ہیں۔ اس سے یہ وضاحت ہو سکتی ہے کہ یوکرین کی حکومت کے کچھ حصوں کو اس سازش کے بارے میں کیوں علم نہیں تھا۔

نیو یارک ٹائمز نے کہا کہ امریکہ نے اس حملے میں کوئی حصہ نہیں لیا، اسے اس کے بارے میں پہلے سے کوئی علم نہیں تھا اور اس کے بعد یوکرائنی حکام کو "نصیحت" کی گئی، نیویارک ٹائمز نے مزید کہا کہ اگر امریکہ اس منصوبے سے آگاہ ہوتا تو وہ اس قتل کی مخالفت کرتا۔
 
http://www.taghribnews.com/vdceef8nejh8poi.dqbj.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس