تاریخ شائع کریں2022 29 September گھنٹہ 11:35
خبر کا کوڈ : 567113

روس اور چین کا افغان اثاثوں کی رہائی کا مطالبہ

سوئٹزرلینڈ کو منتقل کی جانے والی رقم افغان حکام کو دستیاب نہیں ہوگی اور اسے انسانی امداد کے شعبے میں استعمال کیا جائے گا۔ ہم چاہتے ہیں کہ لوٹی ہوئی رقم افغانستان کے عوام کو جلد واپس کی جائے۔
روس اور چین کا افغان اثاثوں کی رہائی کا مطالبہ
روس اور چین کے نمائندوں نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں اعلان کیا ہے کہ افغانستان میں اقتصادی چیلنجوں کو ختم کرنے کے لیے اس ملک کے منجمد اثاثوں کو رہا کرنا ضروری ہے۔

اقوام متحدہ میں روس کی نمائندہ اینا استینووا نے بدھ کی رات کہا: اطلاعات کے مطابق سوئٹزرلینڈ کو منتقل کی جانے والی رقم افغان حکام کو دستیاب نہیں ہوگی اور اسے انسانی امداد کے شعبے میں استعمال کیا جائے گا۔ ہم چاہتے ہیں کہ لوٹی ہوئی رقم افغانستان کے عوام کو جلد واپس کی جائے۔

امریکی محکمہ خزانہ نے عالمی شراکت داروں کے ساتھ مل کر 3.5 بلین ڈالر کے افغان اثاثے رکھنے کے لیے سوئٹزرلینڈ میں ایک ٹرسٹ فنڈ بنایا ہے۔

اقوام متحدہ میں چین کے نائب مستقل مندوب گینگ شوانگ نے بھی کہا کہ افغانستان کے اثاثوں کو افغانوں کی زندگیوں کو بہتر بنانے اور ملکی معیشت کی تعمیر نو کے لیے استعمال کیا جانا چاہیے۔

شوانگ نے مزید کہا: افغانستان کے مرکزی بینک کے بیان کے مطابق، ہم اس ملک کے لوگوں کو کرنسی کے منجمد ذخائر کی مکمل اور فوری منتقلی چاہتے ہیں تاکہ وہ اپنے ملک میں انسانی بحران پر قابو پانے کے لیے اسے مؤثر طریقے سے استعمال کر سکیں۔

افغانستان چیمبر آف کامرس اینڈ انویسٹمنٹ نے اعلان کیا کہ افغان اثاثے منجمد کرنے سے ملکی معیشت پر برے اثرات مرتب ہوئے ہیں۔
http://www.taghribnews.com/vdccsmqp12bqes8.c7a2.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس