تاریخ شائع کریں2022 21 May گھنٹہ 22:56
خبر کا کوڈ : 550454

تحریر الشام کے رہنما کی شام میں ترک عناصر سے پہلی براہ راست ملاقات

مقامی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ انقرہ کی درخواست پر پہلی بار دہشت گرد اتحاد "حزب التحریر الشام" کے سربراہ نے ترکی کے ایک وفد سے براہ راست ملاقات کی۔
تحریر الشام کے رہنما کی شام میں ترک عناصر سے پہلی براہ راست ملاقات
 شام کے صوبے ادلب کے مقامی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ تحریر الشام دہشت گرد اتحاد کے سربراہ ابو محمد الجولانی نے ترکی کے ایک وفد سے ملاقات کی۔

المیادین نیوز نیٹ ورک نے ان ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ ترکی کا ایک فوجی وفد گزشتہ جمعرات کو شمالی ادلب میں باب الحوی کراسنگ کے ذریعے شام میں داخل ہوا۔

ان ذرائع کے مطابق ترک وفد سات گاڑیوں کے قافلے اور دو بکتر بند گاڑیوں پر مشتمل تھا جس میں نقاب پوش فوجی تھے۔

ذرائع نے بتایا کہ وفد نے تحریر الشام کا خیرمقدم کیا، ترک عناصر کا خیرمقدم کیا اور کراسنگ کے قریب ایک عمارت کی طرف روانہ ہوئے جہاں وہ ملاقات کر رہے تھے۔ الجولانی بھی اس عمارت میں ترک وفد کا انتظار کر رہے تھے۔

ابن المعویہ کے مطابق جلسہ گاہ کے ارد گرد درجنوں دہشت گرد تعینات تھے اور ٹرکوں کا گزرنا مکمل طور پر روک دیا گیا تھا۔ اس کراسنگ کے عملے کو بھی اپنے مراکز سے باہر جانے کی اجازت نہیں تھی۔

ذرائع نے بتایا کہ عملے کے تمام مواصلاتی آلات چھین لیے گئے ہیں، یہ بات یاد رہے کہ ترک وفد کی آمد کے بعد سے یہ ملاقات دو گھنٹے تک جاری رہی اور وفد کے ارکان چار بجے حلب-لطاکیہ ہائی وے پر روانہ ہوئے۔ گھڑی اور سات بجے وہ بھی اس علاقے سے چلے گئے۔

ذرائع نے قیاس کیا کہ ملاقات میں تحریر الشام جیلوں میں موجود غیر ملکی عناصر کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا اور مزید تفصیلات دستیاب نہیں ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے کہ تحریر الشام کے رہنما نے ذاتی طور پر ترک عناصر سے ملاقات کی ہے۔ یہ ملاقات انقرہ کی درخواست پر ہوئی۔ ترکی جنگ کے آغاز سے ہی شام میں دہشت گردوں کا حامی رہا ہے۔

شام کی وزارت خارجہ نے شمالی شام میں "محفوظ زون" کے قیام کے بارے میں ترک صدر رجب طیب اردگان کے ریمارکس کے جواب میں کل سخت بیانات جاری کیے ہیں۔

ایک حالیہ بیان میں، صدر نے شمالی بحر اوقیانوس کے معاہدے کی تنظیم (نیٹو) سے پناہ گزینوں کو دوبارہ آباد کرنے کے لیے شام کے ساتھ سرحد کے ساتھ ایک "محفوظ زون" کے قیام میں مدد کرنے کا مطالبہ کیا۔ 
http://www.taghribnews.com/vdccpxqp02bqp08.c7a2.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس