تاریخ شائع کریں2022 17 January گھنٹہ 15:22
خبر کا کوڈ : 534836

متحدہ عرب امارات میں المصفح کے علاقے میں تین آئل ٹینکروں میں دھماکہ

ابوظہبی پولیس نے آج (پیر) کو متحدہ عرب امارات کے المصفح صنعتی زون میں دھماکے اور ابوظہبی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر آگ لگنے کی اطلاع دی ہے۔ یہ صنعا کی طرف سے یمن میں متحدہ عرب امارات کی جارحیت کے تسلسل کے لیے ایک نئی عملی وارننگ کی شکل میں ہے۔
متحدہ عرب امارات میں المصفح کے علاقے میں تین آئل ٹینکروں میں دھماکہ
 متحدہ عرب امارات میں المصفح کے علاقے میں تین آئل ٹینکروں میں دھماکہ ہوا اور اس کے بعد آگ لگ گئی۔ المصفہ متحدہ عرب امارات میں ابوظہبی کے جنوب مغرب میں واقع ایک صنعتی علاقہ ہے۔

ابوظہبی پولیس نے خبر کی تصدیق کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ دھماکے کے بعد ابوظہبی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر نئی تعمیراتی جگہ میں ایک چھوٹی سی آگ بھڑک اٹھی، اور ابھی تک کسی نقصان کی اطلاع نہیں ملی ہے۔ 

متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بھی بریکنگ نیوز میں بتایا کہ صنعتی علاقے میں تین ایندھن کے ٹینکروں میں آگ لگ گئی۔

میڈیا ذرائع نے بتایا کہ ایک دھماکہ ابوظہبی کے ہوائی اڈے پر ہوا اور پولیس ذرائع نے تصدیق کی کہ کئی ڈرونز نے ابوظہبی کے صنعتی علاقے کے ساتھ ساتھ شہر کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ایندھن کے ٹینکوں پر بم گرائے۔

متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق، پہلے دو دھماکے ادنوک گودام کے قریب اور تیسرے ابوظہبی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ہوئے، اور ابتدائی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ اڑنے والی اشیاء، ممکنہ طور پر UAVs نے دونوں علاقوں کو نشانہ بنایا۔ 

ابوظہبی پولیس نے بعد میں تصدیق کی کہ پہلے حملے کا مقصد المصفح کے علاقے میں ایندھن کے ٹینکر اور دوسرا ابوظہبی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر کیا گیا۔

اس خبر کے بعد میڈیا کے کچھ ذرائع نے اطلاع دی کہ ابوظہبی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر پروازیں روک دی گئیں اور ابوظہبی ایئرپورٹ پر بڑی آگ بھڑک اٹھی۔

خبر بریک ہونے کے چند لمحوں بعد، یمنی مسلح افواج کے ترجمان یحیی سریع نے ایک ٹویٹر پوسٹ میں ابوظہبی ایئرپورٹ پر حملے کی ذمہ داری واضح طور پر قبول کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ اس حملے کی تفصیلات جلد جاری کریں گے۔

سعودی اتحاد نے ایک بیان میں یہ بھی کہا کہ اس نے صنعا کے ہوائی اڈے سے کئی ڈرونز کو اڑتے ہوئے دیکھا ہے۔

المیادین نے 20 UAVs اور 10 بیلسٹک میزائلوں سے متحدہ عرب امارات کے اہم علاقوں کو بھی نشانہ بنایا، یمنی فوج اور مقبول کمیٹیوں کے ذریعہ لکھے گئے میڈیا ذرائع کے حوالے سے۔

انصار اللہ تحریک کے سیاسی بیورو کے رکن محمد البخیتی نے حال ہی میں متحدہ عرب امارات کو خبردار کیا: "ہم متحدہ عرب امارات کو مشورہ دیتے ہیں کہ وہ اپنی کشیدگی جاری نہ رکھے، کیونکہ اگر یہ کشیدگی جاری رہی تو یمن کو ملک کے اندر گہرائی سے حملہ کرنا پڑے گا۔" 

ان کے مطابق ریاض اور ابوظہبی کے درمیان ایک معاہدہ ہوا ہے جس کے مطابق سعودی عرب یمن کے جنوبی صوبے یو اے ای کے حوالے کر دے گا اور یو اے ای یمن میں اپنی تمام فوجی صلاحیتیں بروئے کار لائے گا۔
http://www.taghribnews.com/vdcip5awqt1apv2.s7ct.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس